بھوآنہ تھانہ کوٹ وساوا پولیس کی مبینہ پولیس گردی کھل کر سامنے آ گئی ہے.پولیس کے مبینہ تشدد سے 55 سالہ محنت کش جاں بحق ہو گیا ہے

Spread the love

بھوآنہ تھانہ کوٹ وساوا پولیس کی مبینہ پولیس گردی کھل کر سامنے آ گئی ہے.پولیس کے مبینہ تشدد سے 55 سالہ محنت کش جاں بحق ہو گیا ہے.محنت کش کی شناخت نوشیر ولد مختار سکنہ موضع رسالو کے نام سے ہوئی ہے.نوشیر کی بیوی کوثر پروین کے مطابق پولیس نے مجھے اور میرے خاوند نوشیر کو منشیات فروشی کے الزام میں گرفتار کیا.مجھے چھوڑ دیا گیا مگر پولیس رات بھر نوشیر پر تشدد کرتی رہی جس سے نوشیر کی موت واقع ہوئی ہے.کوثر پروین کے مطابق پولیس نے نوشیر کو چھوڑنے کیلئے بھاری رشوت طلب کی جو وہ نہیں دے سکے.جبکہ پولیس کا موقف سامنے آیا ہے نوشیر نشہ کرتا تھا اور ٹی بی کا مریض تھا اس گرفتار کیا مگر طبعیت خراب ہونے پر اس کے اہلخانہ کے حوالے کر دیا.پولیس نے نوشیر پر تشدد کے الزام کو مسترد کر دیا کہ اس کی موت گھر واقع ہوئی ہے.دوسری طرف ڈی ایس پی بھوآنہ محمد حیات سرگانہ سے موقف لینے کی کوشش کی گئی تو انہوں نے موقف دینے سے انکار کر دیا ہے.لواحقین نے پولیس کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے آئی جی پنجاب,وزیر اعلی پنجاب اور آر پی او فیصل آباد سے نوٹس لیکر ذمہ داران کے خلاف کارروائی کر کے انصاف فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے