گزشتہ روز شعبہ اگرانومی،  زرعی یونیورسٹی پشاور کے زیراہتمام  

Spread the love

زرعی یونیورسٹی پشاور

شعبہ اگرانومی
پریس ریلیز:

” مکینیکل چاول کی پیوند کاری اور کبوٹا ٹرانسپلانٹر کا عملی مظاہرہ (Mechanical Demonstration of Kubota Rice Transplanter) ” کا انعقاد ہوا۔ جس میں وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پشاور پروفیسر ڈاکٹر جہان بخت مہمان خصوصی تھے۔

وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جہان بخت نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چاول پاکستان میں ایک اہم فصل ہے، جس کی پیداوار دیگر ممالک کے مقابلے میں کم ہے۔ کاشتکار چاول کی فصل کی پیوند کاری، کٹائی اور پسائی کے لئے مشینری کی عدم دستیابی کی وجہ سے

پسند نہیں کرتے۔  لہذا پاکستان میں میکانائزیشن بہت اہم ہے خاص طور پر صوبہ خیبرپختونخوا میں زیادہ تر کاشتکار لاعلم ہیں۔  چاول کی کاشت کاری کی مناسب میکانائزیشن غیر ملکی ایکسچینج کو بڑھا سکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں چاول مجموعی قومی معیشت کی ایک اہم نقد آور فصل ہے۔ چاول پاکستان میں غذائی اجناس کی اہم فصلوں میں دوسرے نمبر پر ہے اور حالیہ برسوں میں یہ زرمبادلہ کمانے کا ایک بڑا ذریعہ رہا ہے۔  پاکستان کی برآمدات دنیا میں چاول کی کل تجارت کا 8 فیصد سے زیادہ ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں اگائی جانے والی سب سے مشہور اقسام میں باسمتی بھی شامل ہے جو اپنے ذائقے اور معیار کے لئے مشہور ہے۔  پاکستان اس قسم کا ایک بڑا پیدا کنندہ ہے۔  اگرچہ باسمتی چاول دنیا میں بہت مشہور ہے لیکن کمتر اقسام کی آمیزش سے چاول کی کوالٹی متاثر ہوتی ہے جس کے نتیجے میں مارکیٹ اور ساکھ کو نقصان پہنچتا ہے۔

ڈین فیکلٹی آف کراپ پروڈکشن سائنسز میریٹوریس پروفیسر ڈاکٹر فدا محمد ، چئیرمین شعبہ اگرانومی پروفیسرڈاکٹر حبیب اکبر ، ڈائریکٹر فارم پروفیسر ڈاکٹر محمد عارف نے مہمان خصوصی اور دوسرے شرکاء کو خوش آمدید کہا اور ڈیمانسٹریشن کے مقاصد بیان کی۔

چیف آرگنائزر پروفیسر ڈاکٹر امان اللہ نے پاکستان میں غذائی تحفظ اور معیشت میں چاول کی اہمیت اور چاول کی پیداواری صلاحیت کو بہتر بنانے میں چاول کی میکانائزیشن کے کردار پر لیکچر دیا۔

انجینئر خالد محمود آف کبوٹا پاکستان رائس پلانٹر نے فیلڈ میں پریکٹیکل پر لیکچر دیا اور شرکاء کو مکینیکل چاول کی پیوند کاری اور کبوٹا ٹرانسپلانٹر کا عملی مظاہرہ کرایا گیا۔

ڈسٹرکٹ ڈائریکٹر ملاکنڈ ڈاکٹر انعام اللہ اور پرنسپل اے ٹی آئی ڈاکٹر حاجی محمد نے چاول کے کاشتکاروں اور طلباء کی طرف سے کئے گئے سوالات کے جوابات دیئے۔

وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جہان بخت شرکاء میں شیلڈز اور تعریفی اسناد تقسیم کئے