قومی کرکٹر شعیب ملک کی اہلیہ ثانیہ مرزا کا شمار ان شخصیات میں کیا جاتا ہے قومی فاسٹ بالر محمد حسنین نے بائیو مکینک ٹیسٹ پاس کرلیا۔ آرٹیکل 63 اے کی تشریح پر صدارتی ریفرنس، منحرف ارکان تاحیات نااہلی سے بچ گئے حکومت کا سیاستدانوں اور بیوروکریسی کیخلاف نیب کے اختیارات تبدیل کرنے کا فیصلہ ڈالر کے بعد ملک میں سونے کی قیمت کو بھی پر لگ گئے ملک میں بجلی کا شارٹ فال بڑھ کر 5 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گیا ہے۔ ڈالر کی اونچی اڑان، ایک بار پھر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا اداکارہ رمشا خان کو بالی وڈ اداکارہ انوشکا شرما کی کاپی کہا جاتا ہے تارک مہتا کا الٹا چشمہ کافی مقبول ڈراما ہے اور اس کا ایک مقبول کردار اب اس شو کو الوداع کہنے والا ہے۔ امریکی شخص نے سائنس و ٹیکنالوجی کے فروغ کے لیے 111 ٹی شرٹ پہن کر میراتھن میں حصہ لیا رواں سال کے ابتداء میں ایپل اور گوگل کی جانب سے ایسے ایپلی کیشن ڈیویلپرز کو تنبیہ جاری کی گئی تھی اپریل میں ٹویٹر کو خریدنے اور مئی میں خریداری کو عارضی طور روکنے کے اعلان کے بعد اسپیس ایکس اور ٹیسلا کے بانی ایلون مسک نے عندیہ دیا ہے وہاڑی شہر اور گردونواح میں بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے عوام کا جینا دو بھر کردیا۔ ملک بھر کی طرح ڈیرہ غازی خان میں بھی سورج نے پارہ ہائی کرلیا آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ نے گیان واپی مسجد کا وضو خانہ بند کرنے کے عدالتی فیصلے کو ناانصافی قرار دیا۔
راجن پور /محمد پور میں طلبہ کی جانب سے احتجاجی مظاہرہ راجن پور: طلبہ کا انڈس ہائی وے بلاک کر کے احتجاج راجن پور: طلبہ کی جانب سے امتحانات کے طریقہ کار کے خلاف احتجاج راجن پور: مظاہرین سے مزاکرات کی کوشش : پولیس راجن پور: بلاک ٹریفک پر امن کھلوانے کی کوشش:پولیس راجن پور: مظاہرین کی جانب سے پولیس پر شدید پتھراؤ راجن پور: پتھراؤ کے نتیجے میں تھانہ محمد پور پولیس کے دو اہلکار زخمی راجن پور: زخمی اہلکاروں علاج معالجہ کے لیئے ہسپتال منتقل راجن پور: پتھراؤ کرنے والے مظاہرین کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز مردان: فائرنگ / میاں بیوی جانبحق مردان: رستم کے علاقہ جمڈھیر میں فائرنگ:ریسکیو1122 مردان: بھائی کے فائرنگ سے بھاِئی اور بھابھی جانبحق مردان: جائیداد کے تنازعہ پر فائرنگ ہوئی : پولیس مردان: ریسکیو1122 کی ایمبولینس اور میڈیکل ٹیم موقع پر پہنچ گئی رمردان: 35 سالہ خالد بیوی سمیت ہسپتال منتقل: ریسکیو1122 مردان:ہسپتال میں ڈاکٹروں نے دونوں کی موت کی تصدیق کر دی منکیرہ/ٹرانسفارمر خراب منکیرہ:محلہ چھینہ والا کا ٹرانسفارمر 4 دن سے خراب،اہل علاقہ کو شدید مشکلات منکیرہ :لوڈ بڑھ جانے کی وجہ سے آئے روز ٹرانسفارمر جلنا معمول بن گیا منکیرہ :ٹرانسفارمر 25 کے وی کا نصب تھا جوکہ لوڈ برداشت نہ کرسکا منکیرہ :علاقہ مکینوں نے متعدد بار ٹرانسفارمر کو مرمت کروایا منکیرہ : قریبی ٹرانسفارمر پر منتقلی کے بعد وولٹیج کی کمی پوری نہ ہوسکی منکیرہ :شدید گرمی کے باعث علاقہ مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا منکیرہ:فریج،موٹرز،دیگر گھریلوں اشیاء کم وولٹیج کی وجہ سے جل گئیں منکیرہ:ایس ڈی او واپڈا افسران فوری طور پر ایکشن لیکر ٹرانسفارمر نصب کروائیں منکیرہ : نیا ٹرانسفارمر نصب نہ ہوسکا ، احتجاج کرنے پر مجبور ،اہل محلہ فیصل آباد /خون سفید ہوگیا فیصل آباد : بھائی نے بھائی پر مبینہ فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا:پولیس فیصل آباد : لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے سول ہسپتال لایا گیا : پولیس فیصل آباد : وقوعہ تھانہ صدر کے علاقہ نواحی گاؤں 175 گ ب میں پیش آیا:پولیس فیصل آباد : پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد مزید کاروائی عمل میں لائی جائے گی:پولیس فیصل آباد : مقتول کا نام عمر فاروق بتایا جاتا ہے:ایس ایچ او مہر ریاض فیصل آباد : جلد ہی قتل کی وجہ معلوم کر لیں گے:پولیس ننکانہ صاحب/خون سفید ہونے لگے ننکانہ صاحب : زمینی تنازعہ ، بھائی نے بھائی کو گولی مار دی: زرائع ننکانہ صاحب: گولی لگنے سے50 سالہ محمد عارف شدید زخمی: زرائع ننکانہ صاحب: زخمی تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال شاہ کوٹ منتقل : زرائع چنیوٹ/ ویکسینیشن سنٹرزکا دورہ چنیوٹ:ڈپٹی کمشنر کاکورونا ویکسینیشن سنٹرز لالیاں اور چناب نگر کا دورہ چنیوٹ:انتظامات و سہولیات کا جائزہ لیا اور ریکارڈ کو چیک کیا چنیوٹ: ان جنچارجز سنٹرز کو مناسب ہدایات جاری کیں منڈی احمد آباد/سیل دوکانوں کا معاملہ منڈی احمد آباد: قائمہ کمیٹی براۓ ریلوے کے چیئرمین معین وٹو کا منڈی احمد آباد کا دورہ منڈی احمد آباد: ریلوے حکام کی جانب سےسیل دکانوں پر آگاہ کیا گیا منڈی احمد آباد:سیل دوکانے جلد بحال کروانے کا فیصلہ منڈی احمد آباد:ریلوے کرائےمیں کمی کی کوشش کریں گے:معین وٹو لیہ /گھریلو جھگڑا لیہ:چوبارہ معمولی تکرار پر جھگڑا ،گولیاں چل گئیں لیہ:1 خاتون سمیت 4 افراد زخمی:پولیس لیہ:چکنمبر 311 ٹی ڈی اے میں 3 افراد نے معمولی رنجش پر رشتے داروں پر فائرنگ کر دی:پولیس لیہ:زخمیوں میں باپ 2 بیٹے اور ان کی پھوپھو زہرہ بی بی شامل ہیں:پولیس لیہ:زخمی ہسپتال منتقل ،ملزمان فرار ہونے میں کامیاب:پولیس لیہ:3 زخمی حالت تشویش ناک ہونے پر نشتر ریفر لیہ: ملزمان کی تلاش جاری ہے جلد گرفتار کر لیا جائے گا:ایس ایچ او ساہیوال /سنٹرل جیل میں کرپشن کا معاملہ ساہیوال: سپرٹینڈنٹ جیل ،ڈپٹی سپرٹینڈنٹ سمیت 10 جیل ملازمین معطل ساہیوال:سپریٹنڈنٹ منصور اکبر اور دیگر ملازمین پر ماہانہ لاکھوں روپے کی کرپشن کا الزام ساہیوال:سپیشل برانچ کی سورس رپورٹ پر نٹینڈنٹ جیل اور عملہ معطل ساہیوال: رپورٹ کے مطابق سنٹرل جیل میں ماہانہ 81 سے 90 لاکھ تک کی کرپشن کی جا رہی ہے ساہیوال:ڈی ائی جی طارق محمود کو انکوائری آفیسر مقرر کیا گیا ساہیوال: کرپشن انکواری رپورٹ یکم جون کو پیش کرنے کا حکم ساہیوال: تمام ریکارڈ اور سی سی ٹی وی فوٹیج قبضہ میں لے لیں:ڈی ائی جی ظاہر پیر : قومی شاہرہ موچی والا کے قریب دو کنٹینر آپس میں ٹکرا گئے ظاہر پیر : حادثہ کے نتیجہ میں دونوں کنٹینرز روڈ پر الٹ گئے ظاہر پیر : کنٹینرز میں ہارڈ بورڈ شیٹس اور نمک لوڈ تھا ظاہر پیر : ظاہر پیر : حادثہ نیند آنے کے سبب پیش آیا ظاہر پیر: دو شخص معمولی زخمی ،طبی امداد دی گئی ظاہر پیر : ریسکیو 1122 نے کنٹینرز ہٹا کر ،روڈ ٹریفک کیلئے کلیر کر دیا

مارشل لاء

تحریر:(سردارمحمدجاویدخاں) میں نے اپنی ہوش میں دو مارشل لاء دیکھے ہیں‘ سکول میں تھا تو جنرل ضیاء الحق آ گئے اور وہ میرے کالج تک قائم و دائم رہے‘ ہم نے اس زمانے میں سنا مارشل لاء برا ہوتا ہے اورملک جمہوریت اور آئین سے چلتے ہیں‘ پھر دوبار بے نظیر بھٹو اور نواز شریف آئے‘ میں اس وقت صحافت میں آگیا تھا اورپھر میں نے جنرل پرویز مشرف کو طلوع اور غروب ہوتے دیکھا‘ہم مانیں یا نہ مانیں لیکن یہ حقیقت ہے جنرل پرویز مشرف اور جنرل ضیاء الحق دونوں میں بے انتہا خوبیاں تھیں‘ یہ دونوں عالمی طاقتوں کو کھینچ کر اپنے میدان میں بھی لے آئے اور یہ اپنے اپنے زمانے میں دنیا کی مجبوری بھی بن گئے بس ان میں ایک خامی تھی اور اس کا نام تھا آمریت‘ یہ دونوں ڈکٹیٹر تھے اور آمر اگر سونے کے بھی بن جائیں تو بھی یہ باشعور معاشروں کے لیے قابل قبول نہیں ہوتے لہٰذا عوام نے دونوں مرتبہ ان کے خلاف باقاعدہ تحریک چلائی‘یہ پڑھی لکھی رائے ہے اگر جنرل ضیاء الحق حادثے کا شکار نہ ہوتے تو وہ بھی سال چھ ماہ میں جنرل پرویز مشرف بن جاتے‘ ہم اس زمانے میں آمروں کے ساتھ ساتھ پی سی او ججز کو بھی برا بھلا کہتے تھے‘ لوگ ججوں کو آمروں کا یار کہا کرتے تھے اور یہ غلط نہیں تھا کیوں کہ یہ حقیقت ہے ڈکٹیٹر شپ وہ انجن ہوتا ہے جس کو فیول ہمیشہ جوڈیشری سے ملتا ہے لہٰذا ان دونوں کا اتفاق ملکوں اور معاشروں کو تباہ کر دیتا ہے اور ہمارے ماضی میں ہمیشہ یہ ہوتا رہا۔
عمران خان کی لانچنگ کے دوران بھی یہ دونوں ٹولز اکٹھے استعمال ہوئے اور اس میں اب کسی قسم کے شک کی گنجائش موجود نہیں۔ عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش ہوئی تو میرا خیال تھا ہم بڑی تیزی سے اس غار میں داخل ہو رہے ہیں جس کے آخر میں میرے عزیز ہم وطنوں لکھا ہے لہٰذا یہ ڈرامہ پانچویں مارشل لاء پر ختم ہو گا‘ میرے دوست احسن اقبال کا ایک آڈیو میسج اب بھی میرے پاس محفوظ ہے جس میں انہوں نے ملک میں مارشل لاء کے 60 فیصد امکان کا خدشہ ظاہر کیا تھا اور میں نے ان سے اتفاق کیا تھا‘ تین اپریل کا دن طلوع ہوا اور ڈپٹی سپیکر قاسم سوری نے آرٹیکل 5 کا سہارا لے کر تحریک عدم اعتماد مسترد کر دی‘ اتوار کے دن عدالت کھلی‘ چیف جسٹس نے سوموٹو نوٹس لیا اور معاملہ چار دن تک چلتا رہا‘ میرا خیال تھا سپریم کورٹ ’’جوڈیشل کو‘‘ کی طرف جا رہی ہے‘ یہ سال چھ ماہ کے لیے ٹیکنو کریٹس کی عبوری حکومت بنائے گی‘ وہ اپوزیشن اور حکومت دونوں کا احتساب کرے گی‘ معیشت کو پٹڑی پر لائے گی اور پھر الیکشن کرا دے گی‘ سپریم کورٹ اس دوران حکومت پر نظر رکھے گی لیکن جب 7 اپریل کو فیصلہ آیا تو اس نے پوری قوم کو حیران کر دیا‘ یہ فیصلہ آئینی اور قانونی بھی تھا اور متفقہ بھی‘ آپ یقین کریں مجھے اس دن پہلی مرتبہ محسوس ہوا ہم اب رائیٹ ڈائریکشن پر آ گئے ہیں‘ دنیا میں آج تک قانون کی حکمرانی کے بغیر کوئی ملک ترقی نہیں کر سکا اور اس دن ججز نے یہ بنیاد رکھ دی‘ آپ اب صورت حال ملاحظہ کیجیے‘ 23 مارچ سے 9 اپریل تک فوج کے لیے مارشل لاء لگانے کا آئیڈیل ٹائم تھا بس تین ٹرک اور دو جیپیں آنے کی دیر تھی اور پورے ملک نے سکھ کا سانس لے لینا تھا‘ ملک میں کسی سائیڈ سے فوج کے خلاف کوئی نعرہ نہیں لگنا تھا‘ سپریم کورٹ بھی اگر سات اپریل کو عبوری حکومت بنانے اور اپوزیشن اور حکومت دونوں کو جیل میں ڈالنے کا حکم جاری کر دیتی تو بھی ملک میں مٹھائیاں تقسیم ہونی تھیں لیکن فوج اور عدلیہ نے سامنے رکھی برفی نہ اٹھا کر نئی تاریخ رقم کر دی‘ میرا خیال تھا عوام اس آئین پسندی پر جنرل قمر جاوید باجوہ اور چیف جسٹس عمر عطاء بندیال کا شکریہ ادا کرے گی لیکن نتیجہ اس کے برعکس نکلا‘ سوشل میڈیا پر خوف ناک اور واہیات ٹرینڈ شروع ہو گئے اور فوج اور سپریم کورٹ کو برا بھلا کہا جانے لگا‘ میں حیران ہوں آخر جنرل باجوہ اور چیف جسٹس عمر عطاء بندیال نے کیا غلطی کر دی‘ ان کا کیا قصور ہے؟ کیاہم انہیں مارشل لاء نہ لگانے اور آئین نہ توڑنے کی سزا دے رہے ہیں اورکیا انہیں آئین کی پابندی پر برا بھلا کہا جا رہا ہے؟ میں سمجھ نہیں پا رہا۔ آپ دل پر ہاتھ رکھ کر جواب دیجیے کیا ہم من حیث القوم پاگل پن کا شکار نہیں ہو چکے‘ کیا ہماری کھوپڑیاں الٹی نہیں ہو چکیں؟ پوری دنیا کہہ رہی ہے عمران خان کے خلاف کوئی سازش نہیں ہوئی‘ وزارت خارجہ عمران خان کی حکومت کے دوران خط کی تردید کر چکی ہے‘ نیشنل سیکورٹی کمیٹی اعلامیہ جاری کر چکی ہے‘ حکومت سپریم کورٹ میں اپنا دعویٰ ثابت نہیں کر سکی‘ اٹارنی جنرل نے اپنی حکومت کی وکالت سے انکار کر دیا‘ امریکا تین بار تردید کر چکا ہے‘ وہ روس جس کے دورے کو جواز بنا کر عمران خان سازش کا دعویٰ کر رہے ہیں اس کا صدر ولادی میر پیوٹن سازشی اور امپورٹڈ وزیراعظم میاں شہباز شریف کو مبارک باد دے چکا ہے‘ اتحادی حکومت کا ساتھ چھوڑ گئے اور پارٹی کے اپنے 22 ارکان سائیڈ پر چلے گئے لیکن پی ٹی آئی سازش سازش اور غدار غدار کا نعرہ لگا رہی ہے‘ کیا عمران خان کا فرمایا ہوا قانون‘ آئین اور ملک تینوں سے زیادہ مقدم ے؟ اور اگر عمران خان نے کہہ دیا ہے تو کیا پھر پورے ملک کو آئین رول بیک کر دینا چاہیے؟
دوسرا کوئی شخص مجھے صرف یہ بتا دے عمران خان آخر کر کیا رہا تھا جس کی وجہ سے امریکا نے اس کے خلاف سازش کی‘ کیا یہ اسلام آباد سے واشنگٹن تک کوئی سرنگ کھود رہا تھا یا اس نے مریخ پر فوجی اڈے بنا دیے تھے‘ آخر دنیا کو اس سے کیا خطرہ ہو سکتا تھا؟ پورا ملک اس وقت تباہی کے دہانے پر کھڑا ہے‘ کوئی ایک شعبہ بتا دیں جس میں ہم اپنے قدموں پر کھڑے ہوں لہٰذا ہم اگر فرض کر لیں امریکا واقعی ہمارا دشمن ہے اور یہ ہمیں تباہ کرنا چاہتا ہے تو اسے اس نیک کام کے لیے عمران خان سے بہتر شخص کہاں سے ملے گا؟عمرانی حکومت اگر مزید سال چھ مہینے چلتی رہتی تو ہم اپنے ایٹمی پروگرام سے بھی محروم ہو جاتے۔
دوسرا بفرض محال اگر عمران خان کے خلاف واقعی سازش ہوئی تھی تو اس سازش کا فائدہ کس کو ہو گا؟ ہم اگر ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ سے نکل آتے ہیں‘ اگر آئی ایم ایف کا پیکج ایکٹو ہو جاتا ہے‘اگر یورپی یونین ہماری پراڈکٹس کا کوٹا بڑھا دیتی ہے‘ ڈالر نیچے آ جاتا ہے‘ ایل این جی کی سپلائی بحال ہو جاتی ہے‘ سی پیک کی رفتار بڑھ جاتی ہے‘ ناراض بلوچ راضی ہو جاتے ہیں اور اگر ازلی مخالف سیاسی جماعتیں لڑائی بند کر کے ملک پر توجہ دیتی ہیں تو کیا یہ گھاٹے کا سودا ہے؟ کیا ہمیں پٹرول‘ گیس‘ ایکسپورٹس اور معاشی استحکام نہیں چاہیے اور کیا ہم سری لنکا کی طرح ڈیفالٹ ہونا چاہتے ہیں۔
آخر ہم چاہتے کیا ہیں؟ کیا اس ملک میں رول آف لاء نہیں ہونا چاہیے؟ کیا عدم اعتماد غیر آئینی ہے اور کیا جب تک عمران خان اقتدار میں رہتے ہیں ہمیں عدم اعتماد آئین سے خارج کر دینی چاہیے‘ کیا جب تک ایم کیو ایم‘ باپ پارٹی‘ طارق بشیر چیمہ‘ شاہ زین بگٹی اور جی ڈی اے آپ کے ساتھ رہتی ہیں تو یہ اس وقت تک محب وطن ہوتی ہیں اور یہ لوگ جب کسی دوسری پارٹی کی طرف چلے جائیں تو یہ غدار اور امپورٹڈ ہو جائیں گے‘ اپوزیشن لانگ مارچ کرے تو یہ حرام ہے اور آپ کریں تو یہ جمہوریت اور عین عبادت ہے‘ فروغ نسیم آپ کا وزیر قانون ہو‘ اختر مینگل آپ کے ساتھ ہوں تو یہ ٹھیک ہیں اور یہ اپوزیشن کے ساتھ مل جائیں تو یہ بکے ہوئے اور غدار ہیں۔ آپ پورا سٹیٹ بینک اٹھا کر آئی ایم ایف کے حوالے کر دیں تو یہ عین عبادت ہے اور ڈالر کو کنٹرول کرنے والے سازشی ہیں‘ ریاستی ادارے آپ کے لیے ایم کیو ایم‘ ق لیگ اور باپ پارٹی کو مینج کریں تو یہ محب وطن ہیں‘ جنرل باجوہ زندہ باد ہیں اور اگر یہ نیوٹرل ہو جائیں تو یہ سازش کا حصہ بن جاتے ہیں اور سپریم کورٹ اگر میاں نواز شریف کو سزا دے دے تو یہ مجاہد ہے اور یہ اگر ڈپٹی سپیکر کی رولنگ کو غیرآئینی قرار دے دے توآپ ٹرولنگ شروع کر دیتے ہیں اور عدلیہ کو سوشل میڈیا کا واہیات ٹرینڈ بنا دیتے ہیں‘ کیا یہ ملک ہے یا پھر پاگل خانہ ہے؟ کیا اس پورے ملک میں کوئی سمجھ دار شخص نہیں بچا؟ کیا ہم عقل کے اندھوں میں پھنس گئے ہیں اور کیا کوئی بھی شخص ہمیں اللہ رسولؐ کا نام لے کر بے وقوف بنا جائے گا اور ہم اس کے پیچھے لگ کر اپنے رہے سہے ادارے بھی توڑ دیں گے۔
میں فوج اور عدلیہ دونوں کے سیاسی کردار کے خلاف ہوں‘ کسی ادارے کو سیاسی جماعتیں بنانے اور توڑنے کا اختیار نہیں ہونا چاہیے‘ آئین اس ملک کا کور ہے‘ یہ ٹوٹ گیا تو یہ ملک ورق ورق بکھر جائے گا‘ اسے توڑنے کا اختیار بھی کسی ادارے‘ کسی شخص کے پاس نہیں ہونا چاہیے‘ وہ خواہ فوج ہو یا عدلیہ ہو یا پھرعمران خان لیکن اس وقت فوج اور عدلیہ کے ساتھ جو کچھ کیا جا رہا ہے یہ کسی صورت قابل قبول نہیں‘ یہ ہمیں تباہ کر دے گا‘ یہ یاد رکھیں ہم نے اگر عمران خان کو نہ روکا تو یہ شخص یہ ملک توڑ دے گا اور ہم افغانوں کی طرح بھیک مانگ رہے ہوں گے‘ ملک کی فکر کریں‘ یہ ملک واقعی ہاتھ سے نکل رہا ہے۔

Introduction:

Tum News represnts Pakistan…. everywhere globe of the World.It’s international channel… based on London … landing rights 19 countries in the world including Middle East, Europe, UK, USA, Canada, Malaysia and Pakistan.

Sattilite in Pakistan: AsiaSat 7 Also IpTv, Apple Tv, Andiord Tv, Amazon Tv, Roku, Jadoo TV, Jadoo box, Jadoo 5s, Google TV, ebaba…. etc

Tum news|Ruku Channel Store

https://channelstore.roku.com/en-ca/details/31c9eadf684f1f9b3dc900e40c67ea74/tum-news

APP

IOS: https://apps.apple.com/ca/app/tum-news/id1591814293

Android: https://play.google.com/store/apps/details?id=com.live247stream.popularnewstv

Social media

Youtube

Tum News Live: https://www.youtube.com/channel/UCT3sBnwEB-X3r_tqb-u4fQg

Tum News: https://www.youtube.com/channel/UC3AzH8rdkiO_59RNU2jRlQg

Facebook:

: https://www.facebook.com/Tum-News-Live-101181202396831/

Twitter:

Tum News01: https://twitter.com/tumtvofficial

Insta :

Tum News01: https://www.instagram.com/tumtvofficial

Tum news Live :Website

https://tumtv.co.uk/

Office in Pakistan

Head office: Lahore

Sub office: Islamabad,Faisalabad,Okara,Multan,Karachi,Gawadar

650 representers (who work for Tum News) in Pakistan

Share on facebook
Facebook
Share on twitter
Twitter
Share on linkedin
LinkedIn
Share on whatsapp
WhatsApp
Share on google
Google+